اینویلپس

اینویلپس

اینویلپس کے تکنیکی انڈیکیٹر کا مقصد تجارتی حد میں اوپر اور نیچے کی سرحد کا اشارہ کرنا ہے۔

انڈیکیٹر دو متحرک اوسط پر مشتمل ہوتا ہے جسمیں ایک اوپر اور دوسرا نیچے جاتا ہے۔اینویلپس قیمت کے ایکشن پر ایک بینڈ کی طرح استعمال ہوسکتا ہے جوکہ ذیادہ خریدے گئے اور ذیادہ بیچے گئے کی اہمیت کو اجاگر کرتا ہے اور قیمت کے اہداف کے طور پر بھی استعمال ہوسکتا ہے۔

بہت سے تاجر اینویلپس کو بالینگر بینڈز کو ایک بدلاؤ کے طور پر لیتے ہیں۔ دونوں کا بنیادی اصول ایک ہی ہے: کسی بھی بہاؤ کے بعد، قیمت ہمیشہ اہم رحجان کی طرف واپس آئے گی۔

کیسے عمل کیا جائے۔

اینویلپس میٹا ٹریڈرز کے ایک ڈیفالٹ سیٹ موجود ہوتا ہے آپ "شامل کریں" - "انڈیکیٹر" اور پھر "اینویلپس" پر کلک کرکے اسے چارٹ میں داخل کر سکتے ہیں۔.

لفافے والے بینڈ کے ذریعہ تیار کردہ چینل کے اندر تجارت کی ایک مثال

میٹا ٹریڈرز میں ڈیفالٹ مقرر کردہ حد 14 تک ہوتی ہے اور اس سے انحراف (ایم اے کے شفٹ) 1۔0 فی صد مقرر کیا گیا ہے۔ مارکیٹ کی والاٹائیلٹی کے مطابق آپ انحراف کی اس رقم کو ایڈجسٹ کرسکتےہیں ہیں: جتنی ذیادہ والاٹائیلٹی اتنا ہی بڑا انحراف ہونا چاہیے۔ تاہم 2 فیصد سے اوپر انحراف قائم کرنے کی سفارش نہیں دی جاتی۔ ایک ہی دن کی تجارت میں، کوئی ایچ آئی1 چارٹ استعمال کرسکتا ہے، اور کسی بھی کرنسی کے جوڑے کیلئے 10- کے اوسط پیریڈ اور 3۔0 سے 5۔0 فیصد انحراف ٹھیک ہونا چاہئے۔ 'شفٹ' کی فیلڈ جسکی ڈیفالٹ قدر 0 ہے، وقت کے محور پر آگے یا پیچھے بڑھنے کی اجازت دیتا ہے۔ 20 کی قیمت 20 اشارے انڈیکیٹر لائن کو آگے بڑھاتا ہے جبکہ 20 کی قیمت انہیں 20 با پیچھے واپس لے آئے گا۔.

کیسے لاگو کیا جائے۔

اینویلپس انڈیکیٹر حرکت کرتی ہوئی اوسط پر بنیاد کرتا ہے اسلیے دوسرے ایم اے کیطرح اسکے خاص خصوصیات اور ایپلی کیشنز رکھتا ہے۔سب سے پہلے، انڈیکیٹر کی لائنز ایک ٹرینڈ کی ڈائریکشن دکھاتے ہیں: اگر اینویلپس کے بینڈز اوپر جا رہے ہیں، تو یہ ایک اپ ٹرینڈ ہے، اور اگر وہ نیچے جا رہے ہیں تو یہ ایک نیچے کا رجحان ہے۔مزید یہ کہ انڈیکیٹر سائیڈ وے مارکیٹ کی شروعات صاف دکھاتا ہے جیسے ہی اسکی لائن افقی ہو جاتی ہے۔

اینویلپس انڈیکیٹر کو بتانے کے بہت سے طریقے ہیں۔

پہلے تو،اینویلپس بینڈز کے بنائے گئے چینل کے اندر تجارت کرنا ممکن ہے: اپ ٹرینڈ میں جب قیمت نیچے ہو تب خریدیں اور نیچے کا رجحان میں ۔جب قیمت اپر بینڈ حاصل کرلے تب بیچیں۔.

لفافے والے بینڈ کے ذریعہ تیار کردہ چینل کے اندر تجارت کی ایک مثال

جب مارکیٹ ایک باہمی حد تک ہے ، قیمت کا اوپری اینویلپس کے اوپر قیمت کا حرکت کرنا اشارہ دیتا ہے کہ اثاثہ ذیادہ خریدا گیا ہے اور ممکنہ طور پر ریورس ہوجائے گا۔ نچلے بینڈ کی طرف حرکت کا مطلب ہے کہ مارکیٹ ذیادہ بک گئی ہے اور ریورس ہوسکتی ہے۔. 

لفافے والے بینڈ کے ذریعہ تیار کردہ چینل کے اندر تجارت کی ایک مثال

اسی وقت کے دوران، جب قیمت اپ ٹرینڈ کے دوران اپر بینڈ کے اوپر قیمت کو توڑتی ہے، تو یہ اسکی مضبوطی کا اشارہ ہے اور ہم ایک لمبا عرصہ دیکھ سکتے ہیں۔ جی قیمت ایک نیچے کا رجحان میں نچلے اینویلپ سے بھی نیچے ٹوٹتی ہے تو اسکا مطلب ہے کہ نیچے کا رجحان مضبوط ہے اور قیمت تیزی سے گر سکتی ہے۔

اینویلپس انڈیکیٹر مختلف تجارتی حکمت عملی کا حصہ بن سکتے ہیں۔ مثال کے طور پر، یہ چھوٹے ٹائم فریم پر سکلیپنگ کیلئے استعمال ہوسکتے ہیں۔ جیسا کہ یہ رجحان کا انڈیکیٹر ہے، تو اسے چھوٹے اوسیلیٹر کے ساتھ ملا کر اچھے نتائج حاصل کیے جا سکتے ہیں۔.

تازہ ترین خبریں

جی ڈی پی کی ریلیز سے پہلے CAD میں ٹریڈ کیسے کی جائے؟

کینیڈا اپنی ماہانہ GDP گروتھ کی شرح 31 جنوری کو 15:30 MT ٹائم پر شائع کرے گا۔

کیا بینک آف انگلینڈ GBP کو مستحکم رکھنے کا انتظام کر پائے گا؟

بینک آپ انگلینڈ اپنی شرح سود اورمونیٹری پالیسی رپورٹ 30 جنوری کو 14:00 MT ٹائم پر جاری کرے گا۔

فیس بک کے ساتھ معاملات کیسے ہیں؟

فیس بک کی آمدنی کی رپورٹس 30 جنوری کو 00:00 MT ٹائم پر شائع ہوگی۔

ڈپوزٹ کریں اپنے لوکل طریقوں سے۔

مزید سیکھیں

دوبارہ کال کریں

ایک مینجر جلد ہی آپکو کال کرے گا

نمبر تبدیل کریں

آپ کی درخواست موصول ہو گئ ہے

ایک مینجر جلد ہی آپکو کال کرے گا

اندروانی مسئلہ ،تھوڑی دیر بعد کوشش کریں

اہم چیزیں شروع کرنے کیکے
اپنا ای میل لکھیں اور مفت فوریکس گائیڈ بک وصول کریں

فاریکس پر نئے آنے والوں کیلئے یہ کتاب ٹریڈنگ کی دنیا کے بارے میں رہنمائی کرتی ہے۔

اہم چیزیں شروع کرنے کیکے <br> اپنا ای میل لکھیں اور مفت فوریکس گائیڈ بک وصول کریں

کتاب حاصل کرنے کیلئے اپنا ای میل داخل کریں

شکریہ آپکا ای میل موصول ہو چکا ہے

۔لنک پر کلک کریں اور اپنی فوریکس گائیڈ بک وصول کریں۔

آپ اپنے براؤزر کے پرانا ورژن کا استعمال کر رہے ہیں.

اپ ڈیٹ کریں اور محفوظ، مزید آرام دہ، پرسکون اور پیداواری ٹریڈنگ کے تجربے کے لئے ایک کوشش کریں.

Safari Chrome Firefox Opera