فیڈ شرحیں بڑھا رہا ہے لیکن اسٹاک تیزی سے بڑھ رہے ہیں... کیا ہو رہا ہے؟

فیڈ شرحیں بڑھا رہا ہے لیکن اسٹاک تیزی سے بڑھ رہے ہیں... کیا ہو رہا ہے؟

2022-05-12 • اپ ڈیڈ

COVID-19 سستے پیسے کا دور ختم ہو گیا ہے۔ فیڈ کے سخت سائیکل سے کون ڈررہا ہے؟ ظاہری طور پر اسٹاک مارکیٹ تو نہیں ہے۔  

امریکہ میں 40 سالوں میں بدترین افراط زر سے لڑنے کے لیے ایک اٹھائے گئے اقدام میں، فیڈرل ریزرو نے بروز 16 مارچ کو شرح سود میں 0.25% اضافے کا اعلان کیا ہے۔ تین سال سے زیادہ عرصے میں یہ پہلا موقع ہے کہ فیڈ نے بینچ مارک سود کی شرح میں اضافہ کیا ہے۔ آخری اضافہ دسمبر 2018 میں ہوا تھا۔ 25 بیس پوائنٹ اضافہ موجودہ شرح سود کو 0.25% سے 0.5% کی حد تک لے آیا ہے۔ یہ سب کچھ کی توقع کیا جارہی تھا کیونکہ مارکیٹوں نے طویل عرصے بعد اس کی قیمتوں میں اضافہ کیا ہے۔ تاہم، عجیب بات یہ تھی کہ شرح میں اضافے کے بعد امریکی اسٹاک مارکیٹوں نے اس پر ردعمل دیکھایا تھا۔ مارکیٹوں نے اس طرح کا برتاؤ نہیں کیا ہے جس طرح ان کا خیال تھا۔

تھیوری کے مطابق، زیادہ شرحٰیں کی وجہ سے اسٹاکس کو کم پرکشش بننا چاہیے، کیونکہ زیادہ شرحوں کا مطلب کاروباروں اور صارفین کے لیے زیادہ قرض لینے کے اخراجات ہوتے ہیں، جو مجموعی اخراجات کو کم کرتے ہیں۔ بدلے میں، منافع اس سے متاثر ہوتا ہے، جس کی عکاسی اسٹاک مارکیٹ کی قیمتوں میں ہوتی ہے۔ تاہم، اس بار، سرمایہ کاروں نے اس روایتی حکمت کے خلاف بغاوت کی ہے، اور اسٹاک مارکیٹوں کو اچھال دیا ہے۔ طویل انتظار کے بعد فیڈ کی جانب سے شرح میں اضافے کے اعلان کے بعد اور اس سال چھ پوائنٹ مزید اضافے کے امکان کے بعد امریکی منڈیوں نے چھلانگیں لگائی ہیں۔ S&P 500 کی قیمت اس دن 2.2% سے زیادہ اضافے کیساتھ بند ہوئی۔

فیڈ کی شرح میں اضافے کے بعد امریکی اسٹاکس کی قیمتیں کیوں بڑھی؟  

  1. امریکی اسٹاک میں تیزی آئی ہے کیونکہ اسٹاک عام طور پر اس بات کی عکاسی کرتے ہیں کہ معیشت کے لیے کیا بہتر ہے۔ اور، اب شرحیں بڑھانا معیشت کے لیے بہترین حل ہے۔ سرمایہ کاروں کو آخر کار سکون مل گیا ہے کہ فیڈ دہائیوں میں مہنگائی کی بلند ترین سطح سے لڑنے کے لیے کارروائی کر رہا ہے۔  
  2. فیڈ نے باقی تمام چھ میٹنگوں میں شرحوں میں اضافے کے امکان کا اشارہ دے کر مارکیٹ کو حیران کر دیا ہے، جس سے یہ ظاہر ہوتا ہے کہ امریکی معیشت مضبوط ہے اور سختی کے سائکل کو برداشت کر سکتی ہے۔  
  3. اس بات کی طرف اشار کہ روس اور یوکرین کے درمیان تنازعہ حل اور قراردادکے مرحلے میں داخل ہونے لگا ہے۔  
  4. چین کی طرف سے اشارے ہیں کہ وہ اپنے وسیع ریگولیٹری کریک ڈاؤن کو آسان کر دے گا۔

شرح اور امریکی اسٹاک میں اضافے کے بارے میں تاریخ کیا کہتی ہے؟ 

پچھلے دو سالوں کے دوران، اسٹاک مارکیٹ کی قیمتوں میں اضافہ ہوا ہے اور ایک صدی کی بدترین عالمی وبائی بیماری، امریکی تاریخ کے سب سے زیادہ منقسم صدارتی انتخابات میں سے ایک، اور کیپیٹل کی عمارت پر حملے کے دوران بھی یہ مضبوط رہی ہے۔ اب اسٹاک کو دوسری جنگ عظیم کے بعد یورپ کی سب سے بڑی زمینی جنگ اور 1980 کی دہائی کے بعد سب سے تیز افراط زر کا سامنا ہے۔ تاریخ بتاتی ہے کہ شرح میں اضافے کے بعد امریکی اسٹاک مزید اتار چڑھاؤ کا سامنا کرنے کے لیے تیار ہیں۔ تاہم، اس کا مطلب یہ نہیں ہے کہ بلش مارکیٹ کا دور ختم ہو گیا ہے۔ درحقیقت،LPL فنانشل کے مطابق، پچھلے آٹھ سخت سائیکل میں، S&P 500 ہر بار پہلے اضافے کے بعد ایک سال زیادہ تھا۔  

یہاں ایک نظر اس بارے ہے کہ جب فیڈ شرحیں بڑھانا شروع کرتا ہے تو تاریخ امریکی اسٹاک مارکیٹ کے بارے میں کیا کہتی ہے:

65c22407-6cfb-4d0c-9297-17dbdcca8469.jpg

e2372728-a3aa-4af7-90b6-5f1a37ec8970.jpg

آخر کار، فیڈرل ریزرو کی طرف سے مفت رقم وبائی امراض کے دوران اسٹاک مارکیٹ کے لیے ایسا شاندار تحفہ تھی کہ وہ اس کے عادی ہو گئے۔ اس لیے، اگرچہ زیادہ شرحیں امریکی اسٹاک مارکیٹ کے لیے ایک چیلنج بن سکتی ہیں، لیکن یہ سال کے آخر تک اس پر قابو پانے میں کامیاب ہوسکتی ہے۔ ٹریڈروں کو اس سے فائدہ اٹھانے کے لیے اس اتار چڑھاؤ کو احتیاط سے منظم کرنا چاہیے۔

اسی طرح

امریکی مارکیٹیں کیوں بحال ہوئیں؟
امریکی مارکیٹیں کیوں بحال ہوئیں؟

جغرافیائی سیاسی واقعات کے رونما ہونے پر مارکیٹوں میں شدید کریش اور اتار چڑھاؤ دیکھنے میں آنا کوئی نئی بات نہیں ہے۔ ان واقعات کا ابتدائی اور فوری ردعمل عموماً سب سے زیادہ ڈرامائی ہوتا ہے۔

سال 2022 میں اسٹاک مارکیٹوں کیلئے کیا کچھ ہے؟
سال 2022 میں اسٹاک مارکیٹوں کیلئے کیا کچھ ہے؟

سال 2021 اسٹاک مارکیٹ کے لیے خاص طور پر امریکہ میں حیرت کا سال تھا۔ یہ تمام توقعات کے خلاف چلا۔ ہر کوئی اسٹاک کے گرنے کا انتظار کر رہا تھا، صرف یہ دیکھنے کے لیے کہ وہ بار بار ریکارڈ تاریخی بلندیوں تک پہنچ رہے ہیں، اور اس کے برعکس۔

تازہ ترین خبریں

کیا امریکی ڈالر عالمی غلبہ کھو دے گا؟
کیا امریکی ڈالر عالمی غلبہ کھو دے گا؟

امریکہ اور اس کے مغربی اتحادیوں کی طرف سے روس کے زیادہ تر زرمبادلہ کے ذخائر کو منجمد کرنے کے اقدام نے خدشہ پیدا کر دیا ہے کہ امریکی ڈالر کو بطور ہتھیار استعمال کیا جا رہا ہے۔ یہ گرین بیک یعنی ڈالر کے غلبہ کو بری طرح متاثر کر سکتا ہے۔

اپریل میں خریدنے کیلئے بہترین اسٹاک! 
اپریل میں خریدنے کیلئے بہترین اسٹاک! 

جیسے جیسے اپریل قریب آرہا ہے، سرمایہ کار اسٹاک مارکیٹ میں اچھے مواقع کی تلاش میں ہیں۔ آنے والے دور میں مثبت نظر آنے والی دو صنعتیں ہیں۔ الیکٹرک وہیکل (ای وی) اسٹاک اور بینکنگ اسٹاک۔

ڈپوزٹ کریں اپنے لوکل طریقوں سے۔

اپنے کھیل میں سر فہرست رہیں۔

ڈیٹا جمع کرنے کا نوٹس

ایف بی ایس اس ویب سائٹ کو چلانے کے لئے آپ کا ریکارڈ ترتیب دیتا ہے۔ "قبول" کا بٹن دبانے سے آپ ہماری پرائویسی پالیسی پر اتفاق کرتے ہیں۔

دوبارہ کال کریں

ایک مینجر جلد ہی آپکو کال کرے گا

نمبر تبدیل کریں

آپ کی درخواست موصول ہو گئ ہے

ایک مینجر جلد ہی آپکو کال کرے گا

اس فون نمبر کیلئے اگلی کال بیک کی درخواست
۔ میں دستیاب ہوگی

اگر آپ کو کوئی فوری مسئلہ درپیش ہے تو براہ کرم ہم سے رابطہ کریں
لائیو چیٹ کے ذریعے

اندروانی مسئلہ ،تھوڑی دیر بعد کوشش کریں

اپنا وقت ضائع نہ کریں – اس بات پر نظر رکھیں کہ NFP امریکی ڈالر اور منافع کو کس طرح متاثر کرسکتا ہے!

اہم چیزیں شروع کرنے کیکے
اپنا ای میل لکھیں اور مفت فوریکس گائیڈ بک وصول کریں

فاریکس پر نئے آنے والوں کیلئے یہ کتاب ٹریڈنگ کی دنیا کے بارے میں رہنمائی کرتی ہے۔

اہم چیزیں شروع کرنے کیکے <br> اپنا ای میل لکھیں اور مفت فوریکس گائیڈ بک وصول کریں

کتاب حاصل کرنے کیلئے اپنا ای میل داخل کریں

شکریہ آپکا ای میل موصول ہو چکا ہے

۔لنک پر کلک کریں اور اپنی فوریکس گائیڈ بک وصول کریں۔

آپ اپنے براؤزر کے پرانا ورژن کا استعمال کر رہے ہیں.

اپ ڈیٹ کریں اور محفوظ، مزید آرام دہ، پرسکون اور پیداواری ٹریڈنگ کے تجربے کے لئے ایک کوشش کریں.

Safari Chrome Firefox Opera