1. FBS >
  2. بلاگ >
  3. بگ میک انڈیکس کیا ہے؟
2022-08-10 • اپ ڈیڈ

بگ میک انڈیکس کیا ہے؟

1_642x361_cover.png

یہاں تک کہ جنک فوڈ کے تمام تنازعات کے باوجود، بگ میک کو پوری دنیا میں بہت سے لوگ جانتے اور پسند کرتے ہیں۔ لیکن کیا آپ جانتے ہیں کہ بگ میک ایک اقتصادی اشارہ بھی ہے؟

بگ میک انڈیکس کے بارے میں جاننے کیلئے اس مضمون کو پڑھیں، اس کا کیا مطلب ہے، اسے کیسے بنایا گیا، اور آپ اسے ٹریڈنگ میں کیسے استعمال کر سکتے ہیں۔

ٹو آل بیف پیٹیز

آپ جہاں کہیں بھی رہتے ہیں - ٹوکیو، ماسکو، کولمبو، یا اوسلو - آپ باہر جا سکتے ہیں، قریب ترین میکڈونلڈ جا سکتے ہیں، اور دو فل بیف پیٹیز، لیٹش، پنیر، اچار اور پیاز لے سکتے ہیں، یہ سب ایک خاص مایو سے ڈھکے ہوئے ہیں اور ان کا سینڈویچ بنا سکتے ہیں۔ آپ خود کیلئے ایک بگ میک برگر لے سکتے ہیں - تقریباً 500 کیلوریز کی خوشی کیلئے۔ یا نہیں، یا شائد آپ کے کھانے کی عادات پر منحصر ہے۔

جبکہ ہو سکتا ہے کہ، ملکوں کے درمیان، بگ میک کی شکل، سائز اور کیلوریز میں تھوڑا سا فرق ہوتا ہو، پھر بھی، پر دنیا کے سب سے مشہور ہیمبرگر کا بنیادی فارمولا ایک جیسا ہی رہتا ہے۔

بگ میک برگر کے اجزائے ترکیبی زیادہ تر ممالک میں دستیاب کچھ ایک جیسی ہی کھانے کی آئیٹمز شامل ہیں۔ ایسی چیزیں جنہیں صارفین اپنے مقامی گروسری اسٹورز میں روزانہ خریدتے ہیں جیسا کہ: پیاز، گوشت، سلاد پتہ، پنیر، اچار وغیرہ۔ لہذا آپ اسے سامان کی تیار ٹوکری بھی کہہ پر پکار سکتے ہیں۔ اسی لیے 80 کی دہائی کے وسط میں، دی اکانومسٹ نے اس برگر کی قیمت کو کرنسیوں کے تجزیہ کیلئے ایک آسان ٹول کیطور پر منتخب کیا۔

بگ میک انڈیکس کا تعارف

1_642x361_2.png

بگ میک انڈیکس کی ایجاد 1986 میں دی اکانومسٹ نے کی تھی، جو بین الاقوامی کاروبار، سیاست، ٹیکنالوجی اور ثقافت پر سب سے زیادہ بااثر رسالوں میں سے ایک ہے۔

170 سال سے زیادہ کی تاریخ کیساتھ، دی اکانومسٹ کو بجا طور پر اقتصادی خبروں اور عالمی امور کی رپورٹس کیلئے سونے کا معیار سمجھا جاتا ہے۔ میگزین کے عملے میں باصلاحیت اور اعلیٰ تربیت یافتہ صحافی شامل ہیں۔

اپنی پوری موجودگی کے دوران، دی اکانومسٹ نے کئی انڈیکس متعارف کروائے ہیں، جن میں ڈیموکریسی انڈیکس، گلاس سیلنگ انڈیکس، انتہائی خطرناک شہروں کا انڈیکس، کموڈٹی پرائس انڈیکس، اور بگ میک انڈیکس شامل ہیں۔ مختلف ممالک میں بگ میک کی قیمتوں کی بنیاد پر، انڈیکس کو، بہتر اصطلاح کی کمی کی وجہ سے، ایک بہتر طور پر کرنسی کی درجہ بندی کرنی چاہیے۔

مثال کیطور پر، ہم دو ملک لیتے ہیں، امریکہ اور چین۔ ہم ان دو ممالک میں بگ میک کی قیمتوں کا موازنہ کرتے ہیں جن کا اظہار مقامی کرنسیوں میں کیا جاتا ہے۔ قیمتوں میں فرق ہمیں بگ میک ایکسچینج ریٹ دے گا، جو اکثر سرکاری ذرائع سے حاصل ہونے والی چیزوں سے مختلف ہوتا ہے۔ اور پھر، ہم یہ بتانے کیساتھ آگے بڑھ سکتے ہیں کہ آیا زیرِ بحث کرنسی کی قدر زیادہ ہے یا کم ہے۔

ڈالر-یوآن بگ میک ایکسچینج ریٹ کیساتھ، ہمیں 1:4 کا تناسب ملتا ہے یعنی - امریکہ میں $5.93 اور چین میں ¥24.9 کا ہے۔ نتیجے کیطور پر ہمیں ایک متبادل آئیڈیا ملتا ہے کہ چینی یوآن کی قیمت کتنی ہونی چاہیے: ایک ڈالر کیلئے ¥6.7 کی سرکاری شرح کے مقابلے میں $1 کیلئے ¥4.20۔

کھانا پکانے کے فن سے جڑے اس نقطہ نظر کو برگرنومکس بھی کہا جاتا ہے۔ یہ PPP تھیوری پر مبنی ہے، جس کا مطلب پرچیزنگ پاور پیریٹی یعنی خریداری کی طاقت پر مبنی مساوات ہے۔ یہ تصور ایک ایسا خیال پیش کرتا ہے کہ طویل مدت میں شرح مبادلہ کو کسی بھی دو ممالک میں اشیاء اور خدمات کی یکساں ٹوکری کیلئے قیمتوں کو برابر کرنے کی طرف بڑھنا چاہیے۔ اس صورت میں، سامان کی مذکورہ ٹوکری ایک بگ میک ہے۔

بگ میک انڈیکس کیا دکھاتا ہے؟

اگرچہ بگ میک انڈیکس کو کرنسی کی قدر کی نشاندہی کرنے کیلئے شاید ہی ایک درست ٹول کہا جا سکتا ہے، پھر بھی، ڈیٹا کچھ غیر متوقع نتائج اور سوچنے کیلئے آئیڈیاز دے سکتا ہے۔

مثال کیطور پر، بگ میک انڈیکس کیمطابق، روسی روبل دنیا کی سب سے کم قیمت والی کرنسی (٪69.9-) ہے۔ تازہ ترین ریلیز کیمطابق، ایک ڈالر کی قیمت 70 روبل سے زیادہ ہے، جبکہ روس میں ایک بگ میک کی قیمت صرف $1.74 ہوگی، جو دنیا میں برگر کی سب سے کم قیمت ہے! لہذا بگ میک انڈیکس کے نقطہ نظر سے، ایک ڈالر کی قیمت صرف 23 روبل ہونی چاہیے۔

1_642x361_3.png

دیگر کم قیمت والی کرنسیوں میں ترک لیرا، لبنانی پاؤنڈ، ملائیشین رنگٹ، انڈونیشین روپیہ، اور رومانیہ کی لیو شامل ہیں۔

بگ میک انڈیکس سے پتہ چلتا ہے کہ سوئٹزرلینڈ کا فرانک دنیا کی سب سے زیادہ قیمت والی کرنسی ہے۔ سوئٹزرلینڈ میں بگ میک کی قیمت 6.98 امریکی ڈالر ہوگی جس کی شرح 1.12 فرانک فی ڈالر ہے۔ تاہم، کرنسی ایکسچینج مارکیٹیں ظاہر کرتی ہیں کہ USDCHF کی شرح 0.93 ہے۔ اس کا مطلب ہے کہ سوئس کرنسی کی قدر 20.16٪ سے زیادہ ہے۔ ایک بار پھر، یہ ہے کہ اگر ہم معاشیات کو آسان بنانے کا انتخاب کرتے ہیں، تو تمام متعلقہ اعداد و شمار اور عوامل کو ایک طرف رکھتے ہیں۔

کیا ہم ٹریڈنگ کیلئے بگ میک قیمت کا موازنہ استعمال کر سکتے ہیں؟

مضحکہ خیز نام کے باوجود، بگ میک انڈیکس یا برگانومکس والی معیشت کیساتھ چلنے کا صرف ایک مضحکہ خیز طریقہ نہیں ہے۔ یہ سالوں سے ایک عالمی معیار بنتا جا رہا ہے۔ آج، کئی اقتصادی نصابی کتابوں اور مختلف قسم کے تعلیمی مطالعات میں اسے کرنسیوں کے موازنہ کیلئے ایک مفید ٹول کیطور پر شامل کیا گیا ہے۔

لیکن کیا یہ پیشنگوئی کرنے کیلئے ایک اچھا ٹول ہے جو آپ ٹریڈنگ کیلئے استعمال کر سکتے ہیں؟

ایک ٹریڈر مارکیٹ کی پیشنگوئی کیلئے انڈیکس کا استعمال کر سکتا ہے اس بارے ایک ممکنہ روڈ میپ قائم کرنا ہے کہ مارکیٹ کہاں جا رہی ہے۔ تاہم، ایک ہیمبرگر کی قیمت کو متاثر کرنے والے متعدد عوامل پر غور کرنا چاہیے۔ اس کے علاوہ، شرح مبادلہ ہمیشہ اس بات کا یقینی اشارے نہیں ہوتے ہیں کہ مارکیٹ کہاں جاتی ہے۔

خلاصہ

یہ یاد رکھنا ضروری ہے کہ بگ میک انڈیکس فاریکس مارکیٹ کے چھوٹے، قلیل مدتی اتار چڑھاو پر غور نہیں کرتا ہے۔ اس کے بجائے یہ طویل مدت پر توجہ مرکوز کرتا ہے۔ تاہم، جب دوسرے انڈیکیٹرز کے ساتھ جوڑا بنایا جائے اور مختلف مارکیٹ ڈیٹا کیساتھ بیک اپ کیا جائے، تو انڈیکس آپ کے موجودہ تجارتی آلات میں اضافہ کر کے کام میں آ سکتا ہے۔

مثال کیطور پر، آپ FBS کیساتھ فاریکس ٹریڈنگ کرتے وقت بگ میک انڈیکس کو ایڈریس کر سکتے ہیں کہ یہ آپ کی حکمت عملی اور نتائج کو کیسے متاثر کرے گا۔

اکثر پوچھے گئے سوالات

بگ میک انڈیکس کیا ہے؟

بگ میک انڈیکس ایک ایسا ٹول ہے جسے اکانومسٹ نے 1986 میں قوموں کے درمیان صارفین کی قوت خرید میں عدم توازن کی پیمائش کیلئے ایجاد کیا تھا۔ انڈیکس برگر کو "سامان کی ٹوکری" کے متبادل کیطور پر استعمال کرتا ہے، جو صارفین کی قیمتوں میں فرق کیلئے ایک روایتی اقتصادی اشارہ ہے۔

بگ میک انڈیکس کا موازنہ کیا ہے؟

بگ میک انڈیکس مختلف ممالک میں مشہور برگر کی قیمت کا موازنہ کرتا ہے تاکہ یہ معلوم ہو سکے کہ قومی کرنسیوں کو قدر سے کیسے ناپا جاتا ہے۔ نتائج اکثر سرکاری شرح مبادلہ سے متصادم ہوتے ہیں۔

کتنی کرنسیاں زیادہ یا کم قدر کی ہو سکتی ہیں؟

کرنسیوں کی قدر زیادہ یا کم قیمت اس بات پر منحصر ہوتی ہے کہ آیا تجارت میں توازن قائم کرنے کی ضرورت ہے۔ کم قیمت والی کرنسیوں کیساتھ، ملکی اشیا عالمی منڈی میں زیادہ سستی ہیں۔ زیادہ قیمت والی کرنسیاں درآمدی اخراجات کو بڑھا دے گی۔

کیا بگ میک انڈیکس PPP کیلئے ایک مناسب امتحان ہوسکتا ہے؟

بگ میک انڈیکس PPP کے کام کرنے کے طریقہ کار کی ایک بہترین مثال ہے۔ تاہم، کسی کو بھی اس انڈیکس کو عالمی کرنسیوں کے درمیان موازنے کے بنیادی ٹول کیطور پر نہیں دیکھنا چاہیے۔

بگ میک PPP کیا ہے؟

بگ میک PPP (پرچیزنگ پاور پیریٹی) ایک سالانہ رپورٹ ہے جو پوری دنیا میں بگ میک کی متعلقہ قیمت کی بنیاد پر مختلف کرنسیوں کا موازنہ کرتی ہے۔

  • 76

ٹیم اسپرٹ کو محسوس کریں

ڈیٹا جمع کرنے کا نوٹس

ایف بی ایس اس ویب سائٹ کو چلانے کے لئے آپ کا ریکارڈ ترتیب دیتا ہے۔ "قبول" کا بٹن دبانے سے آپ ہماری پرائویسی پالیسی پر اتفاق کرتے ہیں۔

دوبارہ کال کریں

ایک مینجر جلد ہی آپکو کال کرے گا

نمبر تبدیل کریں

آپ کی درخواست موصول ہو گئ ہے

ایک مینجر جلد ہی آپکو کال کرے گا

اس فون نمبر کیلئے اگلی کال بیک کی درخواست
۔ میں دستیاب ہوگی

اگر آپ کو کوئی فوری مسئلہ درپیش ہے تو براہ کرم ہم سے رابطہ کریں
لائیو چیٹ کے ذریعے

اندروانی مسئلہ ،تھوڑی دیر بعد کوشش کریں

اپنا وقت ضائع نہ کریں – اس بات پر نظر رکھیں کہ NFP امریکی ڈالر اور منافع کو کس طرح متاثر کرسکتا ہے!

ابتدائی فوریکس گائیڈ بک

فاریکس پر نئے آنے والوں کیلئے یہ کتاب ٹریڈنگ کی دنیا کے بارے میں رہنمائی کرتی ہے۔

ابتدائی فوریکس گائیڈ بک

ٹریڈنگ شروع کرنے کے لئے سب سے اہم چیزیں
اپنا ای میل لکھیں اور ہم آپ کو مفت ابتدائی فوریکس گائیڈ بک بھیجیں گے

شکریہ آپکا ای میل موصول ہو چکا ہے

ہم نے آپ کے ای میل پر ایک خصوصی لنک ای میل کیا ہے۔
لنک پر کلک کریں اور اپنی فوریکس گائیڈ بک وصول کریں۔

آپ اپنے براؤزر کے پرانا ورژن کا استعمال کر رہے ہیں.

اپ ڈیٹ کریں اور محفوظ، مزید آرام دہ، پرسکون اور پیداواری ٹریڈنگ کے تجربے کے لئے ایک کوشش کریں.

Safari Chrome Firefox Opera