مارکیٹ سائیکل کیا ہیں اور ٹریڈر انہیں کیسے استعمال کرتے ہیں؟

مارکیٹ سائیکل کیا ہیں اور ٹریڈر انہیں کیسے استعمال کرتے ہیں؟

2022-05-18 • اپ ڈیڈ

مالیاتی مارکیٹیں زوال اور ترقی کے ادوار کے درمیان گھومتی ہیں۔ اسکا تعلق نہ صرف معیشت سے ہے بلکہ سرمایہ کاروں کی نفسیات سے بھی ہوتا ہے۔ بہت سے سرمایہ کار زیادہ منافع کمانے کے لیے مارکیٹ سائیکلز کا تجزیہ کرنے کی کوشش کرتے ہیں۔ آئیے ایک نظر ڈالتے ہیں کہ یہ کیا ہے۔

مارکیٹ سائیکلز کیا ہیں؟

مارکیٹ سائیکلز پیٹرن یا ٹرینڈ ہیں جو مختلف مارکیٹوں میں وقت کے ساتھ بنتے ہیں۔ وہ دو کم از کم یا زیادہ سے زیادہ قیمت پوائنٹس کے درمیان کے وقت کی نمائندگی کرتے ہیں۔ عام طور پر، نئے مارکیٹ سائیکل اس وقت ابھرتے ہیں جب کسی خاص شعبے یا صنعت میں کسی قسم کی جدت، نئی مصنوعات، یا ریگولیٹری تبدیلی کی وجہ سے ٹرینڈ یعنی رجحانات بنتے ہیں۔

مارکیٹ سائیکل کی لمبائی مارکیٹ کے لحاظ سے چند منٹوں سے کئی سالوں تک مختلف ہو سکتی ہے۔ سائیکل کے مختلف پہلو ہیں: مثال کے طور پر، ڈے ٹریڈر 15سے 60 منٹ کے وقفوں پر توجہ مرکوز کرتے ہیں، جبکہ رئیل اسٹیٹ کے سرمایہ کار 20 سال تک کی مدت کا تجزیہ کرتے ہیں۔

مارکیٹ سائیکلز کو سمجھنا

مارکیٹوں میں سائیکلیں بنیادی طور پر موجود ہیں کیونکہ معیشت میں سائیکل موجود ہوتی ہیں۔

تاہم، اس کی دوسری وجوہات ہیں۔ معاشی سائیکل نہ صرف کمپنیوں کے منافع کو متاثر کرتا ہے بلکہ سرمایہ کاروں کی نفسیاتی ذہنیت کو بھی متاثر کرتا ہے۔ وہ شاذ و نادر ہی عقلی اور مستحکم عہدوں پر فائز ہوتے ہیں۔ اور جب مارکیٹوں میں اضافہ ہوتا ہے، سرمایہ کار پر امید اور خطرات مول لینے کے لیے تیار ہوتے ہیں۔ وہ اسٹاک خریدتے ہیں، اور قیمتیں بڑھ جاتی ہیں۔ تاہم، موڈ بدل سکتا ہے، پھر سرمایہ کار فروخت کرنا شروع کر دیتے ہیں اور سیکیورٹیز کی قیمت گر جاتی ہے۔

مارکیٹ سائیکلز کے مراحل

ہر مارکیٹ سائیکل میں چار مراحل ہوتے ہیں:

Phases of a Market Cycle accumulation mark-up distribution mark-down.jpg

اکھٹے کرنے کا مرحلہ

یہ مارکیٹ سائیکل کا پہلا مرحلہ ہے۔ پچھلے سائیکل میں مارکیٹ کے نیچے آنے کے بعد اکھٹے کرنے کا مرحلہ شروع ہوتا ہے۔ جیسے جیسے مانگ بڑھتی ہے، قیمتیں اب نئی لووز نہیں بنا سکتیں۔ نتیجتاً، ڈاؤن ٹرینڈ اپنی مومینٹم کھونا شروع کر دیتا ہے۔ مارکیٹ بلش یعنی بئیرز کی حق میں آ جاتی ہے۔

مارک اپ مرحلہ

مارک اپ مرحلے میں، مارکیٹ مضبوط ہونا شروع ہو جاتی ہے۔ قیمتیں بڑھنا شروع ہو جاتی ہیں اور مارکیٹ خریداروں کی ایک بڑی تعداد کو اپنی طرف متوجہ کرتی ہے جو ابتدائی مرحلے میں نئے اپ ٹرینڈ میں شامل ہونا چاہتے ہیں۔ قیمتوں میں بلش ٹرینڈ قیمتوں کو نئی بلندیوں تک لے جاتے ہیں۔ پہلی بار خریدار اپنی ابتدائی سرمایہ کاری سے فائدہ اٹھانے کے لیے بلند سطح کی قیمتوں کا فائدہ اٹھاتے ہیں۔ ٹریڈر بھی اس وقت اوپر کے ٹرینڈ سے فائدہ اٹھاتے ہیں۔

تقسیم کا مرحلہ

تقسیم کے مرحلے میں، مارکیٹ بیچنے کے موومنٹم کا تجربہ کرتی ہے۔ تاہم، قیمتیں کافی عرصے تک مستحکم رہتی ہیں۔ اس کی وجہ مارکیٹ میں خریداروں اور بیچنے والوں کی مساوی تعداد ہوتی ہے۔ مارک اپ مرحلے پر بلش کا ٹرینڈ ختم ہونا شروع ہو جاتا ہے، اور کوئی نئی ہائیز یعنی بلندی کی سظح نظر نہیں آتی۔ جو سرمایہ کار مارکیٹ میں داخل نہیں ہوئے ہیں وہ پیچھے رہ گئے ہیں۔ یہ سرمایہ کاروں کے لیے اثاثے فروخت کرنے کا بہترین وقت ہے کیونکہ قیمتیں بلند ترین سطح پر ہیں۔

مارک ڈاون مرحلہ

یہ مارکیٹ سائیکل کا آخری مرحلہ ہے۔ اس مرحلے میں، بڑے سرمایہ کار منافع کمانے کے لیے اپنی سرمایہ کاری فروخت کرنا شروع کر دیتے ہیں۔ باقی شرکاء تیزی سے اسکو فالو کرتے ہیں۔ جب قیمتیں نیچے کے رحجان میں گرتی ہیں تو مارکیٹ کی رجحان مزید بئیرش یعنی مندی کا شکار ہو جاتا ہے۔ وہ سرمایہ کار جو مارکیٹ میں اس وقت داخل ہوئے جب قیمتیں عروج پر تھیں اپنی سرمایہ کاری کو اس امید پر روکے رکھیں گے کہ قیمتیں بڑھ جائیں گی۔ بدقسمتی سے، قیمتیں گرتی رہیں گی۔ یہ ان سرمایہ کاروں کے لیے ایک نشانی ہے جو نئی خریداری کرنے کے لیے نیچے کے ٹرینڈ کے اختتام کا تعین کر سکتے ہیں۔ جب ایسا ہوتا ہے، جمع ہونے کا مرحلہ شروع ہوتا ہے اور ایک نیا مارکیٹ سائیکل تشکیل پاتا ہے۔

مارکیٹ سائیکل کی اقسام

مارکیٹ سائیکل کی مختلف اقسام ہیں۔ آئیے ہم اہم چیزوں پر غور کریں: یونیورسل (وائک آف مارکیٹ سائیکل)، وال اسٹریٹ مارکیٹ، فاریکس مارکیٹ، اور ہاؤسنگ مارکیٹ سائیکل۔

ویک آف مارکیٹ سائیکل

Wyckoff market cycle.jpg

ویک آف مارکیٹ سائیکل کے چار مراحل ہیں: اکھٹا کرنا، مارک اپ، تقسیم، مارک ڈاؤن

Re-accumulation.jpg

ویک آف مارکیٹ سائیکل قیمت کے مشاہدات، رجحان کی ترقی کے اہم لمحات، اور جمع اور تقسیم کے ادوار پر مبنی ہے۔ اگرچہ ویک آف طریقہ اصل میں صرف اسٹاک پر مرکوز تھا، لیکن اب اس کا اطلاق تمام قسم کی مالیاتی مارکیٹ پر ہوتا ہے۔

ویک آف مارکیٹ سائیکل چار اہم مراحل پر مشتمل ہے: اکھٹا کرنا، مارک اپ، تقسیم، مارک ڈاؤن۔

  1. اکھٹا ہونے کا مرحلہ تجارتی رینج قائم کرتا ہے۔ مارکیٹ میکررکے نام سے جاننے والے زیادہ تر سرمایہ کاروں سے پہلے اثاثے جمع کر لیتے ہیں۔ یہ مرحلہ عام طور پر فلیٹ موومنٹ کے ذریعہ نشان زد ہوتا ہے۔ قیمتوں میں اہم تبدیلیوں سے بچنے کے لیے جمع بتدریج ہوتا ہے۔
  2. مارک اپ کے مرحلے میں، مارکیٹ اوپر کی طرف بڑھنا شروع ہو جاتی ہے۔ ایک ٹرینڈ قائم ہوتا ہے، جو آہستہ آہستہ زیادہ سے زیادہ نئے سرمایہ کاروں کو اپنی طرف متوجہ کرتا ہے، جو بعد میں مانگ میں اضافے کا باعث بنتا ہے۔ جیسے جیسے مارکیٹ اوپر کی طرف بڑھتی ہے، دوسرے سرمایہ کاروں کو مارکیٹ میں داخل ہونے اور اثاثے خریدنے کی ترغیب دی جاتی ہے۔ نتیجے کے طور پر، جوش زیادہ لوگوں کو متاثر کرتا ہے جو شرکت کرنا چاہتے ہیں۔ ایسی مدت کے دوران طلب رسد سے کہیں زیادہ ہوتی ہے۔
  3. اس کے بعد خریدے گئے اثاثوں کی تقسیم کا مرحلہ آتا ہے۔ سیلرر اپنی منافع بخش پوزیشن ان لوگوں کو فروخت کرتے ہیں جو دیر سے مارکیٹ میں داخل ہوتے ہیں۔ ایک اصول کے طور پر، تقسیم کے مرحلے کو ایک فلیٹ حرکت سے نشان زد کیا جاتا ہے، جو طلب کو اس وقت تک جذب کرتا ہے جب تک کہ یہ ختم نہ ہو جائے۔
  4. وِیک آف طریقہ کی قیمت کی نقل و حرکت کا آخری مرحلہ مارک ڈاؤن ہے۔ اس مرحلے پر، سپلائی کا غلبہ ہوتا ہے اور قیمت تقریباً نان اسٹاپ نیچے جاتی ہے۔ دوسرے الفاظ میں، اسٹاک کا ایک اہم حصہ فروخت ہونے کے بعد، مارکیٹ نیچے کی طرف جانا شروع کر دیتی ہے۔ بالآخر، سپلائی مانگ سے بہت زیادہ ہو جاتی ہے، اور نیچے کا رجحان قائم ہو جاتا ہے۔

فاریکس مارکیٹ سائیکل

فاریکس سائیکل کی بہت سی قسمیں ہیں اور ان کی اقسام اور خصوصیات کسی ایک پیرامیٹر یا ٹائم فریم تک محدود نہیں ہیں۔ آئیے ایک سب سے عام غیر ملکی کرنسی کو سخت کرنے اور آسان کرنے کے چکر کو دیکھتے ہیں جس کے چار مراحل ہوتے ہیں: توسیع، بلند سطح، کساد بازاری (یا سکڑاؤ) اور گرت۔

expansion, peak, recession, bottom.jpg

سائیکل کا پہلا مرحلہ توسیع ہے۔ اس مرحلے کے دوران، مارکیٹ پچھلے باٹم یعنی نچلےلیول سے بحال ہو جاتی ہے۔ اثاثہ میں مارکیٹ کے شرکاء کی دلچسپی بڑھ جاتی ہے۔ اور وہ کام کرنا شروع کر دیتے ہیں: وہ اوپر کے ٹرینڈ پر خریدتے ہیں یا نیچے کے ٹرینڈ پر فروخت کردیتے ہیں۔ جتنے زیادہ فعال شرکاء کام کرتے ہیں، رجحان اتنی ہی تیزی سے ترقی کرتا ہے۔

اگلا ایک بلند سطح کا مرحلہ ہے۔ اقتصادی اشارے جیسے پیداوار اور فروخت کا حجم، روزگار وغیرہ اپنی بلند ترین سطح پر ہیں اور اب بڑھ نہیں رہے ہیں۔ اس مرحلے پر، رجحان خود کو ختم کر دیتا ہے اور اس کی تیز رفتار ترقی یا کمی رکنا شروع ہو جاتی ہے۔

پھر کساد بازاری آتی ہے۔ اسٹاک پہلے سے ہی گر رہے ہیں، اور معیشت کے کمزور ہونے کی وجہ سے کموڈٹیز بھی مانگ میں کمی کی توقع سے کم ہونے لگی ہیں۔ اس مرحلے پر، سرمایہ کار اپنی ڈیل بند کر دیتے ہیں۔

ٹرینڈ سائیکل کا آخری مرحلہ گرت ہے۔ اس مرحلے کی خصوصیات نسبتاً مارکیٹ پرسکون اور قیمتوں میں معمولی تبدیلیاں ہیں۔ اس عرصے کے دوران، مارکیٹ اپنی طاقت جمع کر رہی ہے اور کساد بازاری کے بعد مستحکم ہو رہی ہے۔ معاشی حالات اب خراب نہیں رہے لیکن معیشت ابھی توسیع کے مرحلے میں نہیں ہے۔

وال اسٹریٹ مارکیٹ سائیکل

وال سٹریٹ مارکیٹ کے سائیکل ویک آف کے سائیکل سے ملتے جلتے ہیں۔ وہ جمع کرنے کے مرحلے، مارک اپ، تقسیم کے مرحلے، اور مارک ڈاؤن پر بھی مبنی ہیں۔

چارٹ پر وال اسٹریٹ مارکیٹ سائیکل کے چار جذباتی مراحل ہیں: اسٹیلتھ، آگاہی، انماد، بلو آف

wall street market.jpg

پہلا مرحلہ ویک آف کے چکر میں جمع ہونے والے مرحلے کی طرح ہے اور اسے اسٹیلتھ مرحلہ کہا جاتا ہے۔ اس مرحلے پر قیمتیں آہستہ آہستہ بڑھتی ہیں اور پیسہ بنانے والے بہترین خریداری کے مواقع کی نشاندہی کرتے ہیں۔

دوسرا مرحلہ آگاہی ہے۔ قیمتیں ایک بار پھر بڑھنا شروع ہو گئی ہیں، لیکن سرمایہ کار اپنی حفاظت کو کم نہیں ہونے دے رہے ہیں۔ اگر وہ دوبارہ مارکیٹ میں داخل ہونے کا فیصلہ کرتے ہیں تو وہ محتاط ہیں۔

مارکیٹ سائیکل کے سب سے اوپر انماد ہے، زیادہ سے زیادہ مالی خطرے کا نقطہ. یہ وہ وقت ہے جب سرمایہ کار سوچتے ہیں کہ کچھ بھی برا نہیں ہو سکتا۔ اس طرح، ایک خود کو برقرار رکھنے والا سائیکل تشکیل پاتا ہے: زیادہ سے زیادہ سرمایہ کار ناقابل یقین منافع کمانے کی امید میں مارکیٹ میں داخل ہوتے ہیں، جس کے نتیجے میں قیمتوں میں مزید اضافہ ہوتا ہے، اور کیپٹلائزیشن انتہائی بلندیوں تک پہنچ جاتی ہے۔

پھر بلبلا پھٹ جاتا ہے اور مارکیٹ بلو آف مرحلے میں داخل ہو جاتی ہے۔ چونکہ تیزی کے رجحانات کی جگہ مندی کے رجحانات نے لے لی ہے، سرمایہ کار امید کھو دیتے ہیں اور گھبرانا شروع کر دیتے ہیں۔ انہیں اب اپنے ایکشن پر اعتماد نہیں ہے اور وہ اپنے نقصانات کو کم کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔ ان میں سے کچھ آخر کار ہمت ہار جاتے ہیں اور یقین نہیں کرتے کہ مارکیٹ ٹھیک ہو جائے گی۔

ہاؤسنگ مارکیٹ سائیکل

رئیل اسٹیٹ مارکیٹ خاص طور پر چکراتی ہے کیونکہ سپلائی اکثر تیزی سے بدلتی ہوئی مانگ کو برقرار رکھنے میں ناکام رہتی ہے۔ سائیکل چار اہم مراحل پر مشتمل ہے: بحالی، توسیع، ہائپر سپلائی، اور کساد بازاری۔

market quadrants cycle.jpg

بحالی وہ جگہ ہے جہاں مندی کے بعد مارکیٹ بحال ہونا شروع ہوتی ہے۔ لین دین کی تعداد بتدریج بڑھتی ہے اور غیر دعویدار جائیداد کا حصہ کم ہوتا جاتا ہے: طلب توسیعی مرحلے کے دوران پیدا ہونے والی اضافی جگہ کو جذب کرنا شروع کر دیتی ہے۔

توسیع اقتصادی ترقی اور آبادی کی قوت خرید میں اضافے سے ہوتی ہے۔ مارکیٹ سائیکل اس مرحلے میں داخل ہوتا ہے جب غیر دعوی شدہ جائیداد کی سطح کم سے کم ہو جاتی ہے اور اس کے برعکس خریدار کی دلچسپی بڑھ جاتی ہے۔ اس وقت، سرمایہ کار بڑھتی ہوئی طلب کو پورا کرنے کے لیے نئی سہولیات کی تعمیر میں فعال طور پر سرمایہ کاری کرنا شروع کر دیتے ہیں۔

بعض مواقع پر، سرمایہ کار زمین کی بڑھتی ہوئی قیمت یا خود پروجیکٹس پر توجہ دینا چھوڑ دیتے ہیں، یہ مانتے ہیں کہ قیمتوں اور کرایے کی شرحوں میں مزید اضافہ ان کی لاگت کو پورا کر دے گا۔ یہ تب ہوتا ہے جب مارکیٹ میں جائیدادوں کی قیمتیں آبادی اور کاروبار کی حقیقی قوت خرید سے نمایاں طور پر بڑھنے لگتی ہیں، اور لین دین کی تعداد کم ہونا شروع ہو جاتی ہے۔ ایک ہی وقت میں، توسیع کی مدت کے دوران شروع ہونے والی اشیاء کی تعمیر کو راتوں رات روکا نہیں جا سکتا، اور مارکیٹ حد سے زیادہ سیر ہو جاتی ہے، جو بلبلے کی تشکیل کا باعث بن سکتی ہے۔

کساد بازاری خود کو قیمتوں اور کرائے کی شرحوں میں کمی سے ظاہر کرتی ہے، جو نہ صرف مانگ میں کمی سے متاثر ہوتی ہے، بلکہ غیر دعویدار جائیداد کے بڑھتے ہوئے حصہ سے بھی متاثر ہوتی ہے۔ کساد بازاری کے دوران، سرمایہ کار نئے منصوبوں کو منجمد کر دیتے ہیں اور تعمیراتی شرحیں گر جاتی ہیں۔

خلاصہ

بار بار چلنے والے مارکیٹ سائیکل کو سمجھنا کسی بھی ٹریڈر کے لیے ضروری مہارت ہے۔ سائیکل تجزیہ کرنے والے ماہرین کا خیال ہے کہ صرف سائیکلوں کی مدد سے ہی یہ پہلے سے دیکھا جا سکتا ہے کہ مارکیٹ کس سمت جائے گی۔ یہ سچ ہے یا نہیں، کوئی چیز یقینی ہے: آپ کی سوچ کی مدد سے مارکیٹ کی پیشکش کی کارکردگی کو آگے بڑھانا ممکن ہے۔

اسی طرح

ڈوجی کینڈل اسٹک پیٹرن کا استعمال کرتے ہوئے ٹریڈنگ کیسے کی جا سکتی ہے؟
ڈوجی کینڈل اسٹک پیٹرن کا استعمال کرتے ہوئے ٹریڈنگ کیسے کی جا سکتی ہے؟

ڈوجی کینڈلز نایاب پرندے ہیں، لیکن اگر آپ انہیں پکڑ لیتے ہیں، تو یہ صحیح داخلے کے لمحے سے فائدہ اٹھانے کا بہترین موقع ہو سکتا ہے۔ اس مضمون میں بحث کی جائے گی کہ ڈوجی کینڈل کیا ہے۔ آپ کو ایک ڈوجی حکمت عملی بھی ملے گی جو منافع دلا سکتی ہے۔

موونگ ایوریجزکے بارے میں 8 حقائق
موونگ ایوریجزکے بارے میں 8 حقائق

موونگ ایوریجز (MAs) وہ کلیدی آلات ہیں جنہیں شوقیہ ٹریڈرجب وہ چارٹ پر قیمت کا تجزیہ کرنے میں کچھ مدد چاہتے ہیں تو بڑے پیمانے پر اسکا استعمال کرتے ہیں ۔ اس آرٹیکل میں، ہم موونگ ایوریج کی بنیادی باتوں کو دیکھیں گے اور پھر کچھ لائف ہیکس سیکھیں گے جو آپ کے تجارتی نتائج کو بڑھانے کے لیے اس ٹول کو استعمال کرنے میں آپ کی مدد کریں گے۔  

ٹریڈنگ میں ڈرا ڈاؤن
ٹریڈنگ میں ڈرا ڈاؤن

زیادہ تر (اگر سبھی نہیں) ٹریڈر مارکیٹ پر حکمرانی کرنا چاہتے ہیں۔ ایک بھی نقصان، غیر دانشمندانہ فیصلہ، یا جذباتی ٹریڈنگ سے گریز کرنا بالکل درست ہوگا۔ بدقسمتی سے، غلطیوں کے بغیر ہر مارکیٹ کی نقل و حرکت اور ٹریڈنگ کی پیشنگوئی کرنا ناممکن ہے۔

بلا جھجھک سوال پوچھیں

  • FBS کی جانب سے کمائی گئی رقم کیسے وڈرا کر سکتے ہیں؟

    طریقہ کار بہت سیدھا ہے۔ ویب سائٹ پر وڈرا کے صفحے یا FBS پرسنل ایریا کے فنانشل سیکشن پر جائیں اور وڈرا تک رسائی حاصل کریں۔ آپ کمائی ہوئی رقم اسی ادائیگی کے نظام کے ذریعہ حاصل کرسکتے ہیں جو آپ نے ڈپازٹ کرنے کے لئے استعمال کیا تھا۔ اگر آپ نے مختلف طریقوں کے ذریعہ اکاؤنٹ کو مالی اعانت فراہم کی ہے تو، جمع شدہ رقوم کے حساب سے تناسب میں اسی طریقوں کے ذریعہ اپنا منافع واپس لیں۔

  • FBS اکاؤنٹ کو کیسے کھولا جائے؟

    ہماری ویب سائٹ پر ‘اکاؤنٹ کھولیں’ کے بٹن پر کلک کریں اور پرسنل ایریا میں جائیں۔ تجارت شروع کرنے سے پہلے، ایک پروفائل کی تصدیق کروائیں۔ اپنے ای میل اور فون نمبر کی بھی تصدیق کروائیں، اپنی شناختی تصدیق کروائیں۔ یہ طریقہ کار آپ کے فنڈز اور شناخت کی حفاظت کی ضمانت دیتا ہے۔ ایک بار جب آپ تمام جانچ پڑتال کرلیں تو، ترجیحی ٹریڈنگ پلیٹ فارم پر جائیں اور ٹریڈنگ شروع کریں۔

  • ٹریڈنگ کیسے شروع کی جائے؟

    اگر آپ +18 سے زائد کی عمر رکھتے ہیں، تو آپ FBS میں شامل ہوسکتے ہیں اور اپنے FX سفر کا آغاز کر سکتے ہیں۔ ٹریڈںگ کرنے کے لئے، آپ کو ایک بروکریج اکاؤنٹ اور مالیاتی منڈیوں میں اثاثوں کے برتاؤ کے بارے میں مناسب علم کی ضرورت ہے۔ ہمارے مفت تعلیمی مواد اور ایک FBS اکاؤنٹ بنانے کے ساتھ بنیادی باتوں کا مطالعہ بھی شروع کریں۔ آپ ڈیمو اکاؤنٹ کے ذریعہ ورچوئل پیسہ سے اس پورے ماحول کی جانچ پڑتال بھی کرسکتے ہیں۔ ایک بار جب آپ تیار ہوجائیں تو، حقیقی مارکیٹ میں داخل ہوں اور کامیابی کے لئے ٹریڈںگ یعنی تجارت شروع کریں۔

  • لیول اپ بونس کو کیسے فعال کیا جائے؟

    اپنے FBS پرسنل ایریا کے ویب یا موبائل ورژن میں لیول اپ بونس اکاؤنٹ کھولیں اور اپنے اکاؤنٹ میں 140$ تک مفت حاصل کریں۔

ڈپوزٹ کریں اپنے لوکل طریقوں سے۔

اپنے کھیل میں سر فہرست رہیں۔

ڈیٹا جمع کرنے کا نوٹس

ایف بی ایس اس ویب سائٹ کو چلانے کے لئے آپ کا ریکارڈ ترتیب دیتا ہے۔ "قبول" کا بٹن دبانے سے آپ ہماری پرائویسی پالیسی پر اتفاق کرتے ہیں۔

دوبارہ کال کریں

ایک مینجر جلد ہی آپکو کال کرے گا

نمبر تبدیل کریں

آپ کی درخواست موصول ہو گئ ہے

ایک مینجر جلد ہی آپکو کال کرے گا

اس فون نمبر کیلئے اگلی کال بیک کی درخواست
۔ میں دستیاب ہوگی

اگر آپ کو کوئی فوری مسئلہ درپیش ہے تو براہ کرم ہم سے رابطہ کریں
لائیو چیٹ کے ذریعے

اندروانی مسئلہ ،تھوڑی دیر بعد کوشش کریں

اپنا وقت ضائع نہ کریں – اس بات پر نظر رکھیں کہ NFP امریکی ڈالر اور منافع کو کس طرح متاثر کرسکتا ہے!

ابتدائی فوریکس گائیڈ بک

فاریکس پر نئے آنے والوں کیلئے یہ کتاب ٹریڈنگ کی دنیا کے بارے میں رہنمائی کرتی ہے۔

ابتدائی فوریکس گائیڈ بک

ٹریڈنگ شروع کرنے کے لئے سب سے اہم چیزیں
اپنا ای میل لکھیں اور ہم آپ کو مفت ابتدائی فوریکس گائیڈ بک بھیجیں گے

شکریہ آپکا ای میل موصول ہو چکا ہے

ہم نے آپ کے ای میل پر ایک خصوصی لنک ای میل کیا ہے۔
لنک پر کلک کریں اور اپنی فوریکس گائیڈ بک وصول کریں۔

آپ اپنے براؤزر کے پرانا ورژن کا استعمال کر رہے ہیں.

اپ ڈیٹ کریں اور محفوظ، مزید آرام دہ، پرسکون اور پیداواری ٹریڈنگ کے تجربے کے لئے ایک کوشش کریں.

Safari Chrome Firefox Opera