کساد بازاری مالیاتی منڈیوں کو کیسے متاثر کرتی ہے؟

کساد بازاری مالیاتی منڈیوں کو کیسے متاثر کرتی ہے؟

2023-04-12 • اپ ڈیڈ

معیشت کبھی بھی ایک رفتار سے نہیں چلتی ہے۔ ماہرین اقتصادیات اقتصادی ترقی کو اتار چڑھاؤ کے چکروں کو اسکا لازمی حصہ سمجھتے ہیں۔ کساد بازاری کو کاروباری سائیکل کا ایک ناگزیر حصہ سمجھا جاتا ہے۔ کساد بازاری اس وقت ہوتی ہے جب دو یا دو سے زیادہ مسلسل سہ ماہیوں کے دوران GDP میں کمی آرہی ہو۔ مزید برآں، اس کے بعد عام طور پر بڑھتی ہوئی بے روزگاری، گرتی ہوئی ریٹیل سیلز، اور آمدنی اور مینوفیکچرنگ انڈیکس کے حجم میں کمی کا ہونا ہے۔

آج، تقریباً ہر امریکی سی ای او کساد بازاری کے لیے تیار ہو رہا ہے، اور زیادہ تر اقتصادی ماہرین کا خیال ہے کہ جلد ہی مندی آنے والی ہے۔ اس کی وجہ یہ ہے کہ بڑھتی ہوئی شرح سود، مہنگائی میں مسلسل اضافہ، کریڈٹ کارڈز، رہن، کاروں کی خریداری، کاروباری قرضوں، اور معیشت کو ہوا دینے والے کسی بھی قرضے کی لاگت میں اضافہ معاشی ترقی کو روکتی ہے۔ آخری بار جب فیڈ نے 12 ماہ کے دوران اتنا زیادہ درد لیا وہ 1980 میں تھا، جس کے نتیجے میں شدید معاشی بدحالی دیکھنے میں آئی۔

یورپی ممالک میں، صورت حال اور بھی خراب ہے، کیونکہ، اعلیٰ نرخوں کے علاوہ، معیشت موسم سرما سے پہلے ہی گیس کی بلند قیمتوں کی وجہ سے جدوجہد کر رہی ہے۔ جیسا کہ کاروباری اداروں نے گیس کے استعمال کو کم کیا ہے، تو اس سے اقتصادی سرگرمیوں میں بھی کمی آ رہی ہے۔

کساد بازاری کب تک قائم رہتی ہے؟

سال 1854 سے سال 1919 تک، اوسط کساد بازاری 21.6 ماہ تک جاری رہی۔ تاہم، وقت گزرنے کیساتھ ساتھ، کساد بازاری کی مدت میں کمی ہوگئی ہے۔ نیشنل بیورو آف اکنامک ریسرچ (NBER) کے اعداد و شمار کیمطابق، 1945 سے 2009 تک، امریکہ میں اوسط کساد بازاری 11 ماہ تک جاری رہی۔ پچھلے 30 سالوں کے دوران، امریکہ چار بار کساد بازاری کے ادوار سے گزرا ہے۔ آئیے انکو دیکھتے ہیں۔.

کویڈ-19 کے دوران کساد بازاری

آخری کساد بازاری فروری 2020 میں شروع ہوئی اور صرف دو ماہ تک جاری رہی، جو امریکی تاریخ کی سب سے کم مدت والی کساد بازاری تھی۔

بڑی کساد بازاری (دسمبر 2007 تا جون 2009) رہی

رئیل اسٹیٹ مارکیٹ کا یہ بلبلا جزوی طور پر عظیم کساد بازاری کا سبب بنا۔ عظیم کساد بازاری اتنی شدید نہیں تھی جتنی پھیلی مایوسی تھی۔ تاہم، اس کی طویل مدت اور شدید اثرات نے اسے ایک ایسا نام دیا۔ 18 ماہ تک جاری رہنے والی عظیم کساد بازاری حالیہ امریکی کساد بازاری کی مدت سے تقریباً دوگنی تھی۔

ڈاٹ کام کساد بازاری (مارچ 2001 سے نومبر 2001) تک رہی

2000 کی دہائی کے آغاز میں، امریکہ کو کئی بڑے معاشی مسائل کا سامنا کرنا پڑا، بشمول ٹیک ببل کا کریش اور اینرون جیسی کمپنیوں میں اکاؤنٹنگ سکینڈلز، جو کہ 9/11 کے دہشت گردانہ حملوں کی زد میں آ گئے تھے۔ ان پریشانیوں نے مل کر ایک مختصر کساد بازاری کو ہوا دی، جس سے معیشت تیزی سے واپس معمول پر لوٹ آئی۔

خلیجی جنگ کی کساد بازاری (جولائی 1990 تا مارچ 1991) تک رہی

1990 کی دہائی کے آغاز میں، امریکہ ایک مختصر، آٹھ ماہ کی کساد بازاری سے گزرا، جس کی وجہ پہلی خلیجی جنگ کے دوران تیل کی قیمتوں میں اضافہ تھا۔

کیا آپ کساد بازاری کی پیشنگوئی کر سکتے ہیں؟

یہ دیکھتے ہوئے کہ معاشی پیشنگوئی غیر یقینی ہے، مستقبل کی کساد بازاری کی پیشنگوئی کرنا آسان نہیں ہے۔ مثال کیطور پر، سال 2020 کے اوائل میں COVID-19 بظاہر کہیں بھی نظر نہیں آرہا تھا اور پھر چند ہی مہینوں میں، امریکی معیشت جزوی طور پر بندش کا شکار ہونا شروع ہو گئی تھی، اور لاکھوں کارکنان اپنی ملازمتوں سے ہاتھ دھو بیٹھے تھے۔

انورٹڈ ییلڈ کرو (Inverted Yield Curve)

ییلڈ کرو (Yield Curve) ایک ایسا چارٹ ہے جو چار ماہ کی مدت والے نوٹوں سے لے کر 30 سالہ بانڈز تک، امریکی حکومت کے بانڈز کی ییلڈ یعنی سود کی شرح ایک رینج کو مرتب کرتا ہے۔ جب معیشت عام طور پر کام کرتی ہے، تو طویل مدتی بانڈز پر سود کی شرح مختصر مدت سے زیادہ ہونی چاہیے۔ نتیجے کے طور پر، سرمایہ کار کساد بازاری کے بارے میں فکر مند ہوتے ہیں جب طویل مدتی ییلد یعنی شرح سود قلیل مدتی ییلڈ یعنی شرح سود سے کم ہوتی ہے۔ اس رجحان کو پیداوار کے الٹ ہو جانے کیطور پر جانا جاتا ہے، اور اس کی ماضی کی کساد بازاری میں پیشنگوئی ہو چکی ہے۔

صارفین کے اعتماد میں کمی

امریکی معیشت کا بنیادی محرک صارفین کے اخراجات ہیں۔ جب صارفین کا اعتماد کم ہو جاتا ہے، یعنی لوگ پیسے خرچ کرنے میں پراعتماد محسوس نہیں کرتے، تو معیشت سست ہو جاتی ہے۔ اگر سروے صارفین کے اعتماد میں مسلسل کمی کو ظاہر کرتے ہیں، تو یہ معیشت کے لیے آنے والی مصیبت کی علامت ہو سکتی ہے۔

اسٹاک مارکیٹ میں اچانک کمی سکتی ہے

اسٹاک مارکیٹوں میں نمایاں کمی کساد بازاری کی نشاندہی کر سکتی ہے کیونکہ سرمایہ کار معاشی سست روی کی توقع میں نقد رقم حاصل کرنے کیلئے سیکیورٹیز فروخت کر دیتے ہیں۔

بے روزگاری میں اضافہ

اگر لوگ اپنی ملازمتیں کھو دیتے ہیں تو یہ معیشت کیلئے ایک بری علامت ہے۔ چند مہینوں میں ملازمتوں میں ہونے والی شدید کمی ایک انے والی کساد بازاری کا انتباہ دیتے ہیں، چاہے NBER نے ابھی تک کساد بازاری کا اعلان نہ کیا ہو۔

کساد بازاری کے دوران اثاثے کیسے کام کرتے ہیں؟

سرمایہ کاروں کے برعکس، ٹریڈر کساد بازاری سے نہیں ڈرتے کیونکہ وہ طویل اور مختصر دونوں سمتوں میں ٹریڈنگ کر کے کما سکتے ہیں۔ تاہم، صحیح انتخاب کرنے کیلئے کساد بازاری کے دوران اثاثوں کے رویے کو سمجھنا انتہائی ضروری ہے۔

کساد بازاری تیل کو مار دیتی ہے

تاریخی طور پر، تیل کی قیمت میں اضافہ مستقبل میں زیادہ افراط زر کا باعث بنتا ہے اور کمی اس کے برعکس کام کرتی ہے۔ توانائی کے ایندھن کے اخراجات، جن کا تعلق نقل و حمل اور خوراک کی قیمتوں سے بھی ہے، اشیائے خوردونوش کی ٹوکری کا ایک اہم حصہ پر مشتمل ہے۔

جب کساد بازاری ہوتی ہے، صارفین کم خریدتے ہیں، اس لیے پروڈیوسر اپنے اخراجات میں بھی کمی کرتے ہیں۔ توانائی کی طلب میں کمی اور تیل کی قیمت میں خاطر خواہ کمی آجاتی ہے۔ اس طرح، تیل کے ٹریڈرز کو تیل کی قیمتوں میں کمی کی پیشنگوئی کرنے کیلئے صارفین کے اخراجات پر مبنی رپورٹس پر محتاط نظر رکھنی چاہیے۔

گولڈ

ماضی میں، سونے کی قیمتوں اور کساد بازاری کا الٹا تعلق ہوا کرتا تھا۔ جب معیشت کمزور ہوتی ہے تو سونے کی قیمت عام طور پر بڑھ جاتی ہے۔ پچھلی تین کساد بازاری کے ادورا میں، 2020، 2007، اور 2001، میں سونے کی قیمت میں اضافہ ہوا جبکہ S&P 500 کی قدر میں کمی واقع ہوئی۔

ایسا اس لیے ہوا ہے کہ گزشتہ دو دہائیوں سے، مرکزی بینک کساد بازاری کے دوران کلیدی شرحوں میں کمی اور مقداری نرمی (بیرونی قرضوں کی خریداری) کیساتھ معیشتوں کی مدد کر رہے ہیں، جس کی وجہ سے عالمی افراط زر میں اضافہ ہوا ہے۔

money supply_2.png

خاص طور پر 2024 کے امریکی صدارتی انتخابات سے قبل یہ وقت بھی اس سے مستثنیٰ نہیں ہوگا۔ اسٹاک مارکیٹ عام طور پر M2 پیسے کی فراہمی کے اشارے کی پیروی کرتی ہے۔ دوسرے الفاظ میں، فیڈرل ریزرو کو اسٹاک اور معیشت کو فروغ دینے کیلئے مزید رقم چھاپنی ہوگی۔

M2 Money and S P 500.png

اس طرح، طویل مدت کیلئے سونے کی قیمت میں زیادہ سے زیادہ اضافہ ہوگا۔ سونے کی خریداری کیلئے بہترین وقت معاشی کساد بازاری کی انتہا ہے جب مرکزی بینک اپنی پالیسیوں کو تبدیل کرتے ہیں اور کم شرح سود اور اضافی رقم کی فراہمی والی معیشتوں کو سپورٹ کرنا شروع کر دیتے ہیں۔ ایسے لمحات میں بڑی مقدار میں اس قیمتی دھات کو خریدا جاتا ہے اور اس کی قیمت بڑھ جاتی ہے۔

اسٹاک اور کرپٹو

کساد بازاری اسٹاک کو مختلف طریقے سے متاثر کرتی ہے، یہ کمپنی کی قسم پر منحصر ہے۔ کچھ کمپنیاں جیسے یوٹیلیٹی، ہیلتھ کیئر، اور کنزیومر سٹیپلز کساد بازاری کے دوران مستحکم رہتی ہیں۔ صنعتی کمپنیوں کیساتھ ساتھ ٹریول اور ٹیکنالوجی والی کمپنیاں جو بڑا قرض رکھتی ہیں وہ مارکیٹوں میں کم کارکردگی کا مظاہرہ کرتی ہیں۔

کرپٹو کرنسی مارکیٹ ایک نوجوان شعبہ ہے۔ اس طرح زیادہ تر پراجیکٹس پر قرضے زیادہ ہوتا ہیں۔ نتیجے کیطور پر، سرمایہ کار کرپٹو سے چھٹکارا حاصل کرنے کو ترجیح دیتے ہیں جب کساد بازاری شروع ہوتی ہے اور جب معیشت بحالی کی طرف بڑھنے لگتی ہے تو واپسی کا رخ کرتے ہیں۔

Strong stocks during recession.png

دوسری طرف، وہ شعبے جو کساد بازاری کے دوران کم کارکردگی کا مظاہرہ کرتے ہیں، وہ کساد بازاری کے بعد کی بحالی میں اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کریں گے۔ مثالوں میں مالیات، رئیل اسٹیٹ، صارفین کی خدمات، صنعتیں، اور مٹریلیز شامل ہیں۔

Strong stocks post recession.png

آپ تجارتی اکاؤنٹ بنانے اور CFDs کیساتھ پوزیشن لینے کے ذریعے بڑھتی ہوئی مارکیٹ کے اتار چڑھاؤ کو ٹریڈ کر سکتے ہیں۔ یہ مالیاتی ڈیریویٹوز ہیں، جو آپ کو طویل مدت کیلئے بڑھتی ہوئی مارکیٹوں کے بارے میں قیاس آرائیاں کرنے کے قابل بناتا ہے، اس کے ساتھ ساتھ مختصر مدت کیلئے گرتی ہوئی مارکیٹوں کے قابل بناتا ہے۔

کرنسیاں

کساد بازاری کے دوران، ایک ملک کی کاروباری سرگرمی گر جاتی ہے، اور معیشت سست پڑ جاتی ہے۔ نتیجے کیطور پر، ایک کرنسی گرنے کا امکان ہے کیونکہ ملک سرمایہ کاری کیلئے کم پرکشش جگہ بن جاتا ہے۔

تاہم، چونکہ بڑے ممالک کی معیشتیں آپس میں جڑی ہوئی ہیں، اس لیے کساد بازاری کسی ایک ملک میں نہیں ہوتی بلکہ ان سب میں پھیل جاتی ہے۔ اس صورت میں، سب سے زیادہ مستحکم تجارتی توازن اور غیر ملکی کرنسی کے اثاثوں کی ایک بڑی تعداد والے ممالک کی کرنسیاں (تاکہ وہ ممالک غیر ملکی اثاثے فروخت کر سکیں اور جب اتار چڑھاؤ بڑھے تو رقم واپس گھر لے آئیں) تاکہ دوسروں کے مقابلے میں فائدہ مند ہوں۔

آج بھی، امریکی ڈالر (USD)، اور سوئس فرانک (CHF)، محفوظ کرنسیوں میں شمار ہوتے ہیں۔

USD

اگر امریکی ڈالر زیادہ پیداوار دینے والی کرنسیوں کے مقابلے میں مضبوط ہے، تو اس کا مطلب ہے کہ مارکیٹیں ممکنہ طور پر حال ہی میں جاری کیے گئے معاشی ڈیٹا یا خبروں سے ناخوش ہیں۔ اس صورت میں، غیر ملکی سرمایہ کار امریکی خزانے کو محفوظ پناہ گاہ کیطور پر خریدتے ہیں۔ ان کو خریدنے کیلئے، انہیں USD خریدنے کی ضرورت ہے۔ جب بہت سے سرمایہ کار ایک ہی وقت میں ایسا کرتے ہیں، تو یہ USD کی قدر بڑھ جاتی ہے۔

سوئس فرانک

سوئس فرانک ایک اور کرنسی ہے جسے محفوظ پناہ گاہ سمجھا جاتا ہے۔ سیاسی استحکام، قدامت پسند مالیاتی پالیسی، اور ایک مستحکم معیشت CHF کو ایک مستحکم کرنسی بناتی ہے، جو بحران کے وقت بین الاقوامی سرمایہ کاروں کو راغب کرتی ہے۔

عالمی مالیاتی منڈیوں میں بہت سے بحرانوں کے باوجود، سوئٹزرلینڈ ہمیشہ بغیر کسی پریشانی کے ثابت قدم رہنے میں کامیاب رہا ہے۔

اگر یورپی معیشت کو کساد بازاری کا سامنا ہے تو، سوئس فرانک (CHF) ممکنہ طور پر زیادہ پیداوار دینے والی یورپی کرنسیوں کے مقابلے میں مضبوط ہو گا۔

کساد بازاری میں ٹریڈنگ کیسے کریں۔

گرتی ہوئی مارکیٹوں کے مواقع سے فائدہ اٹھانے کیلئے مختصر مدت کیلئے داخل ہوں

شارٹنگ یعنی مختصر مدت کیلئے گرنے والی منڈیوں میں مواقع سے فائدہ اٹھانے کا ایک طریقہ ہے۔ بہت سے ٹریڈرز مالیاتی ڈیریویٹوز جیسے CFDs کو مختصر مدت کیلئے استعمال کرتے ہیں، یعنی کسی بھی تجارتی اثاثہ کو بیچتے ہیں۔ یہ آلات ٹریڈرز کو اس قابل بناتے ہیں کہ وہ تجارتی اثاثہ کی قیمت کی نقل و حرکت پر قیاس آرائی پر مبنی پوزیشن حاصل کر سکیں، یعنی اثاثے کے خود مالک ہونے کی ضرورت نہیں۔

کساد بازاری کے دوران مختصر مدت کیلئے بہترین اثاثے:

  • سفر، صنعتی، ٹیکنالوجیکل اسٹاک، اور کرپٹو کرنسیاں۔ سرمایہ کار خطرے والے اثاثوں اور پراجیکٹس کو زیادہ قرض کیساتھ چھوڑ دیتے ہیں، اس لیے ان کی قیمتیں گر جاتی ہیں۔
  • تیل (Brent, WTI)۔ جب کاروباری سرگرمیاں بڑھ جاتی ہیں، تو تیل کی طلب بھی بڑھ جاتی ہے، اور قیمتوں کو اونچا کر دیتی ہیں۔ اس کے برعکس، کساد بازاری کے دوران کموڈیٹی کی قیمتیں نیچے جاتی ہیں۔
  • زیادہ شرح سود رکھنے والی کرنسیاں (AUD, GBP) بمقابلہ محفوظ کرنسیاں (USD, CHF)۔ سرمایہ کار زیادہ آمدنی کی تلاش سے ایسی جگہوں کا رخ کرتے ہیں جو انکے سرمائے کو محفوظ رکھنے میں مدد فراہم کریں۔ نتیجے کیطور پر، زیادہ شرح سود رکھنے والی کرنسیوں میں کمی آتی ہے۔

جب مارکیٹ بحال ہو تو طویل مدت کیلئے داخل ہوں

کساد بازاری کے دوران طویل مدت کیلئے جڑے رہنا خطرناک ہوسکتا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ ٹریڈر اور سرمایہ کار ابتدائی بحالی کا انتظار کرتے ہیں جب بہت سے اثاثے اپنی کم سے کم حد تک پہنچ جاتے ہیں۔ پھر وہ ان سطحوں پر خریدتے ہیں، آخرکار کساد بازاری کے بعد کی بحالی سے زیادہ سے زیادہ فائدہ اٹھانے کی کوشش کرتے ہیں۔

معاشی بحالی کیلئے بہترین اثاثے:

  • گولڈ۔ حکومتیں الٹرا-ڈوش مانیٹری پالیسی اپناتی ہیں، پیسے چھاپتی ہیں اور اپنے بیلنس سے اثاثے خریدتی ہیں اور مستقبل میں مہنگائی میں اضافے کا خطرہ پیدا کرتی ہیں)۔ اعلی افراط زر کا امکان سونے کو پرکشش بناتا ہے۔
  • سفر، صنعتی، ٹیکنالوجیکل اسٹاک، اور کرپٹو کرنسیاں۔ یہ اثاثے سستے ہو جاتے ہیں اور اس لیے طویل مدتی سرمایہ کاروں کیلئے پرکشش ہو جاتے ہیں۔
  • تیل (Brent, WTI)۔ جب کاروباری سرگرمیاں بڑھ جاتی ہیں، تو تیل کی طلب بھی بڑھ جاتی ہے، اور قیمتوں کو اونچا کر دیتی ہیں۔
  • زیادہ شرح سود رکھنے والی کرنسیاں (AUD, GBP) بمقابلہ محفوظ کرنسیاں (USD, CHF)۔ سرمایہ کار خطرے سے متعلق جذبات کی طرف لوٹتے ہیں اور زیادہ شرح سود فراہم کرنے والے بانڈز خریدتے ہیں۔ ان ممالک کی کرنسیوں کی مانگ بھی بڑھ جاتی ہے۔

نتیجہ

کساد بازاری ٹریڈرز اور سرمایہ کاروں دونوں کیلئے بہت سے مواقع پیدا کرتی ہے۔ طویل اور مختصر ٹریڈ (یعنی کھلی خرید و فروخت کے تجارتی آرڈرز) کرنے کا موقع رکھتے ہیں، ٹریڈرز زیادہ اتار چڑھاؤ کی وجہ سے اپنے سرمائے میں نمایاں اضافہ کر سکتے ہیں۔ ایک ہی وقت میں، سرمایہ کار کم قیمتوں پر مطلوبہ اثاثے خرید سکتے ہیں۔

کامیاب ہونے کیلئے، آپ کو کساد بازاری کی وجہ اور حکومت کیلئے مسائل کو حل کرنے کے ممکنہ طریقوں کو سمجھنے کی ضرورت ہے (اکثر یہ ایک انتہائی نرم مالیاتی پالیسی ہے)۔ FBS کیساتھ، آپ کساد بازاری کے دوران اسٹاک، کرپٹو کرنسیوں اور تیل کو بیچنے پر کما سکتے ہیں۔ مزید یہ کہ جب معیشت بحالی یعنی ترقی کی طرف لوٹتی ہے تو آپ سونا اور دیگر اثاثوں کو خرید کر اپنا سرمایہ بڑھا سکتے ہیں۔

اسی طرح

عدم توازن پر مبنی ٹریڈنگ کی حکمت عملی
عدم توازن پر مبنی ٹریڈنگ کی حکمت عملی

یہ آرٹیکل آپ کو ٹریڈںگ کی ایک ایسی حکمت عملی سے متعارف کرواتا ہے جس کے لیے حجم، تکنیکی انڈیکیٹرز، اور قیمت کے پیٹرنز کی ضرورت نہیں ہوتی۔ آپ کو محض پرائس ایکشن پر توجہ دینے کی ضرورت ہوتی ہے۔ عدم توازن کے ٹیوٹوریل میں خوش آمدید۔

2023 میں گولڈ کی ٹریڈنگ کرنا
2023 میں گولڈ کی ٹریڈنگ کرنا

ٹریڈرز گولڈ کو ترجیح کیوں دیتے ہیں؟ اس کی بہت سی وجوہات ہوتی ہیں۔ اس آرٹیکل میں، ہم گولڈ کو ٹریڈنگ کے ایک اثاثے کے طور پر منتخب کرنے کی وجوہات کے حوالے سے تبادلہ خیال کریں گے، نیز گولڈ کی قیمتوں میں اتار چڑھاؤ کا باعث کون سی چیزیں ہیں، اور CFD کے ذریعے گولڈ کی ٹریڈ کرنے کا طریقہ کار کیا ہے۔

مومینٹم ٹریڈنگ کی حکمت عملی
مومینٹم ٹریڈنگ کی حکمت عملی

اس آرٹیکل میں ٹریڈنگ کی MACD + RSI حکمت عملی پر تبادلہ خیال کیا گیا ہے نیز اسے forex مارکیٹ میں ٹریڈ کے مواقعوں کی نشاندہی کرنے کے لیے مؤثر طور پر کیسے استعمال کیا جا سکتا ہے۔

بلا جھجھک سوال پوچھیں

  • FBS اکاؤنٹ کو کیسے کھولا جائے؟

    ہماری ویب سائٹ پر ‘اکاؤنٹ کھولیں’ کے بٹن پر کلک کریں اور پرسنل ایریا میں جائیں۔ تجارت شروع کرنے سے پہلے، ایک پروفائل کی تصدیق کروائیں۔ اپنے ای میل اور فون نمبر کی بھی تصدیق کروائیں، اپنی شناختی تصدیق کروائیں۔ یہ طریقہ کار آپ کے فنڈز اور شناخت کی حفاظت کی ضمانت دیتا ہے۔ ایک بار جب آپ تمام جانچ پڑتال کرلیں تو، ترجیحی ٹریڈنگ پلیٹ فارم پر جائیں اور ٹریڈنگ شروع کریں۔

  • ٹریڈنگ کیسے شروع کی جائے؟

    اگر آپ +18 سے زائد کی عمر رکھتے ہیں، تو آپ FBS میں شامل ہوسکتے ہیں اور اپنے FX سفر کا آغاز کر سکتے ہیں۔ ٹریڈںگ کرنے کے لئے، آپ کو ایک بروکریج اکاؤنٹ اور مالیاتی منڈیوں میں اثاثوں کے برتاؤ کے بارے میں مناسب علم کی ضرورت ہے۔ ہمارے مفت تعلیمی مواد اور ایک FBS اکاؤنٹ بنانے کے ساتھ بنیادی باتوں کا مطالعہ بھی شروع کریں۔ آپ ڈیمو اکاؤنٹ کے ذریعہ ورچوئل پیسہ سے اس پورے ماحول کی جانچ پڑتال بھی کرسکتے ہیں۔ ایک بار جب آپ تیار ہوجائیں تو، حقیقی مارکیٹ میں داخل ہوں اور کامیابی کے لئے ٹریڈںگ یعنی تجارت شروع کریں۔

  • FBS کی جانب سے کمائی گئی رقم کیسے وڈرا کر سکتے ہیں؟

    طریقہ کار بہت سیدھا ہے۔ ویب سائٹ پر وڈرا کے صفحے یا FBS پرسنل ایریا کے فنانشل سیکشن پر جائیں اور وڈرا تک رسائی حاصل کریں۔ آپ کمائی ہوئی رقم اسی ادائیگی کے نظام کے ذریعہ حاصل کرسکتے ہیں جو آپ نے ڈپازٹ کرنے کے لئے استعمال کیا تھا۔ اگر آپ نے مختلف طریقوں کے ذریعہ اکاؤنٹ کو مالی اعانت فراہم کی ہے تو، جمع شدہ رقوم کے حساب سے تناسب میں اسی طریقوں کے ذریعہ اپنا منافع واپس لیں۔

ڈپوزٹ کریں اپنے لوکل طریقوں سے۔

ڈیٹا جمع کرنے کا نوٹس

ایف بی ایس اس ویب سائٹ کو چلانے کے لئے آپ کا ریکارڈ ترتیب دیتا ہے۔ "قبول" کا بٹن دبانے سے آپ ہماری پرائویسی پالیسی پر اتفاق کرتے ہیں۔

دوبارہ کال کریں

ایک مینجر جلد ہی آپکو کال کرے گا

نمبر تبدیل کریں

آپ کی درخواست موصول ہو گئ ہے

ایک مینجر جلد ہی آپکو کال کرے گا

اس فون نمبر کیلئے اگلی کال بیک کی درخواست
۔ میں دستیاب ہوگی

اگر آپ کو کوئی فوری مسئلہ درپیش ہے تو براہ کرم ہم سے رابطہ کریں
لائیو چیٹ کے ذریعے

اندروانی مسئلہ ،تھوڑی دیر بعد کوشش کریں

اپنا وقت ضائع نہ کریں – اس بات پر نظر رکھیں کہ NFP امریکی ڈالر اور منافع کو کس طرح متاثر کرسکتا ہے!

آپ اپنے براؤزر کے پرانا ورژن کا استعمال کر رہے ہیں.

اپ ڈیٹ کریں اور محفوظ، مزید آرام دہ، پرسکون اور پیداواری ٹریڈنگ کے تجربے کے لئے ایک کوشش کریں.

Safari Chrome Firefox Opera