قیمتی دھاتیں میں کامیاب سرمایہ کاری

قیمتی دھاتیں میں کامیاب سرمایہ کاری

قدیم وقت سے قیمتی دھاتیں، جیسا کہ گولڈ، پلاٹینم، اور سلور لوگوں کے مالیاتی استحکام کا ذریعہ رہا ہے، خاص طور پر بے یقینی کے صورت حال کے دوران۔ جنگ شروع ہوتی ہے اور ختم ہوتی ہے، صدیاں بدل جاتی ہیں اور دھات سرمایہ کاری کے لئے بہترین اثاثہ رہتا ہے۔ یہ سرمایہ کاروں کے درمیان اتنا جانا پہچانا کیوں ہے؟ آئیے تلاش کرتے ہیں۔

گولڈ (XAU)

جب آپ گولڈ پر سرمایہ کاری کرنے کا منصوبہ بناتے ہیں تو آپ سمجھتے ہیں کہ آپ خود سے بلین خریدیں اور فروخت کریں گے۔ اس کی بجائے، آپ گولڈ کی قیمت کے سپوٹ کے ساتھ آپریشن کریں گے۔ یہ بہت سے عناصر سے چل سکتا ہے اور عالمی مارکیٹ پر اثر ڈالتا ہے۔ آئیے تلاش کرتے ہیں کہ گولڈ آپ کی سرمایہ کاری کی حکمت عملی کے لئے اچھا کیوں ہے۔

"پیلی دھات" مالیاتی مارکیٹ میں طویل وقت کے لئے شامل ہوتی ہے۔ پرانے وقتوں میں، یہ فاییٹ کرنسی کو سپورٹ کرنے کے لئے استعمال ہوتی تھی۔ گولڈ سٹینڈرڈ پیرئڈ کے دوران، کاغذی رقم واپس ہونا تھی گولڈ کے برابر ان کے خزانوں میں واپس۔ 1980 سے 2000 کے آغاز تک اس قیمتی دھات پر سود کی شرح بڑھتے ہوئے اسٹاک اور معیشیت کے مضبوط اور مستحکم نشونما کی وجہ سے بہت کم تھی۔ یہی وجہ تھی کہ اس وقت کے دوران قیمت ایک اندازے کے اندر $300 سے $500 تک تھی۔ گولڈ کی سرمایہ کاری پر سود کی شرح 2008 کے مالیاتی خسارے کے بعد بڑھ گئی۔ اگست 2011 میں قیمت حتی کہ $1907 تک پہنچ گئی۔ 2013 سے ریکورنگ یو ایس معیشیت اس کے ساتھ ساتھ ایف ای ڈی مہنگائی کی شرح نے گولڈ کو کمزور کر دیا، تاہم، قیمتی دھات پر سرمایہ کاروں کی دلچسپی قائم ہے۔

Xauusd.png

سرمایہ کار گولڈ کو کیوں منتخب کرتے ہیں؟

- یہ ایک محفوظ اثاثہ ہے جو غیر یقینی وقت میں تناسب میں رہتا، سرمایہ کاری کی مارکیٹ میں خسارے، بہت زیادہ قومی قرضے، کمزور کرنسی، زیادہ مہنگائی، جنگ اور معاشی غیر اسحتکام شامل ہیں۔- گولڈ کے سٹینڈرڈ کی تاریخ اس گولڈن اثاثہ کو ایک چیز کی بجائے کرنسی کی طرح بنا دیتا ہے؛

- گولڈ ایک اسپیکولیشن کی طرح عمل کرتا ہے؛

- گولڈ یونیورسل ہے: ،یہ پائیدار ہے، شکل بدلتا ہے اور وسیع طور پر قبول کیا جاتا ہے۔

عناصر جو گولڈ کی قیمت پر اثرانداز ہوتے ہیں

اہم کرنسی کے برعکس، گولڈ روزگاری کی سطح، پیداوار، اور بنیادی ڈھانچے سے سپورٹ نہیں کیا جاتا۔ اس کا دوسرے اثاثوں جیسا کہ تیل اور گندم سے موازنہ کیا جا سکتا ہے جیسا کہ ان سب کی طبعی خصوصیات ہیں۔ تاہم، گولڈ کی قیمت عام طور پر انفرادی سطح پر اس کی صنعتی ترسیل اور طلب پر عمل کرتی ہے۔ نیچے ہم نے سب سے اہم گولڈ کی قیمت کے ڈرائیور کا ذکر کیا ہے۔

1۔ مرکزی بینک کے ریزرو۔ مرکزی بینک پیلی دھات تنوع کے مقاصد کے لئے رکھتا ہے۔ گولڈ کو فنڈ کی ایمرجنسی تحلیل اور کرنسی انٹروینشن کے طور پر استعمال کیا جا سکتا ہے۔ اس کے ساتھ، جب مرکزی بینک گولڈ فروخت کرنے یا خریدنے کا فیصلہ کرتا ہے تو ملک کی معاشی حالت دیکھتا ہے۔ ایک لمحے کے لئے، اگر مرکزی بینک اپنی مانیٹری پالیسی ریزرو کو تنوع کرنے کا فیصلہ کرتا ہے تو گولڈ کی قیمت بڑھے گی۔

2۔ رسک سے نفرت۔ اکیوٹی مارکیٹ میں جذبات پیلی دھات کی قیمت میں اہم کردار ادا کرتے ہیں۔ اگر رسک آف کی محرکات بڑھتی ہیں، سرمایہ کار اسٹاک کو فروخت کرنے کو ترجیح دیتا ہے اور محفوظ اور مستحکم گولڈ کی طرف بڑھتے ہیں۔

3۔ مرکزی بینک کے سود کے ریٹ۔ یہ ایک تاریخی عنصر ہے جو گولڈ کی قیمت پر اثرانداز ہوتا ہے۔ جب حقیقی شرح سود نچلے لیول تک سیٹ ہوتا ہے، سرمایہ کاری کے متبادل کم یا منفی واپسی فراہم کرتے ہیں، سرمایہ کار کو گولڈ کی دکھیلتے ہوئے۔ اگر سود کی شرح زیادہ ہوتی ہے، تو ایک محفوظ اثاثہ کی سرمایہ کاری کی دلچسپی کم ہو جاتی ہے۔

4۔ یو ایس ڈی محرکات۔ جیسا کی گولڈ کی قیمت یو ایس ڈالر میں ہوتی ہے، بہت بڑا بلاواسطہ تعلق ہے، یہی ہے کہ وہ مختلف سمتوں میں جاتے ہیں۔ اگر سرمایہ کار مارکیٹ کو گرین بیک فروخت کرتا ہے، گولڈ مزید دلچسپ ہو جاتا ہے، اس کے نتیجے میں، ذیادہ مہنگا ہوتا ہے۔ متبادل کے طور پر، اگر یو ایس ڈی مضبوط ہوتا ہے، گولڈ کی قیمت گرتی ہیں۔ تاہم، آپ کو پتا ہونا چاہیے کہ یہ سب کیسس میں نہیں ہوتا، لیکن زیادہ تر خسارے کے دوران اور معیشیت میں بڑی بے یقینی کے دوران۔

5۔ مہنگائی۔ صارف کی قیمت کی انڈیکس گولڈ کی قیمت میں تبدیلی سے براہ راست تعلق رکھتا ہے۔ اگر مہنگائی زیادہ ہو، سرمایہ کار مزید "سخت" اور پائیدار اثاثوں کو دیکھتے ہیں اور گولڈ میں سرمایہ کاری کو منتخب کرتے ہیں۔ بصورت دیگر، اگر معیشیت کی حالت بہتر ہو، گولڈ کا مطالبہ کم ہو جاتا ہے اور اثاثہ سستا ہو جاتا ہے۔

6۔ گولڈ کی پیداوار والے ممالک۔گولڈ کی پیداوار والے ممالک میں غیر یقینی سیاسی صورتحال اس کے ساتھ ساتھ سینکشنز ان پر عمل پیرا ہوتے ہیں، گولڈ کی پیداوار پر اثرانداز ہو سکتے ہیں، اور اسی لئے اس کی قیمت بڑھتی ہے۔ تاہم، جیسا کہ کوئی سرکاری دستاویز نہیں جو سرمایہ کاروں کو پیداوار کا لیول بتا سکے، یہ عنصر سرمایہ کاری کے مقاصد کے لئے سب سے کم علمی ہے۔

سلور (XAG)

Xagusd.png

سلور سرمایہ کاروں میں دوسری مشہور دھات ہے۔ جیسا کہ اس کا پیلا بھائی، یہ طویل عرصے کے لئے کرنسی کے طور پر سمجھا جاتا ہے۔ مثال کے طور پر، برطانوی پاؤنڈ اس لئے پاؤنڈ کہلاتا ہے، کیونکہ یہ سلور کے پاؤنڈ کے برابر تھا۔ بہت سے عناصر جو قیمت پر اثرانداز ہوتے ہیں وہ ان جیسے جو گولڈ سے تعلق رکھتے ہیں، تاہم، تغیر میں بہت کم فرق ہے۔ قیمت کی محرکات ایک جیسی ہیں، تاہم، سلور گولڈ کی نسبت کم تغیر والا ہے۔

پلاٹینم

pl.png

پلاٹینم مالیاتی مقاصد کے لئے بہت کم استعمال ہونے والی دھات ہے۔ اس کی قیمت صنعتی طلب اور مائننگ کے طریقے کی وجہ سے اثرانداز ہوتی ہے۔ جیسا کہ اس کی پیداوار کچھ ممالک تک محدود ہے، گولڈ کی پیداوار کے برعکس، پلاٹینم میں تغیرات کسی بھی دھات کی مارکیٹ سے زیادہ ہیں۔ مزید برآں، یہ دوسرے دھاتوں کی نسبت دنیا کی غیر یقینی صورتحال سے زیادہ اثرانداز ہوتی ہے۔

نتیجے کے طور پر، سرمایہ کار دھات کو غیر مستحکم صورتحال میں محفوظ اثاثہ کے طور پر منتخب کرتے ہیں۔ وہ زیادہ مستحکم منافع لاتے ہیں اور مارکیٹ میں تبدیلی سے کم اثرانداز ہوتے ہیں۔

اسی طرح

کامیاب ٹریڈنگ کے لئے سوشل میڈیا کا استعمال کیسے کریں

فاریکس مارکیٹ سرمایہ کاروں اور ٹریڈرز کے درمیان اب بھی مشہور مارکیٹ کے طور پر جانی جاتی ہے۔ اس کی مقبولیت انٹرنیٹ کے بھیلاؤ سے اور بڑھی ہے۔ بہت سے سوشل نیٹ ورکس پر بروکر اور ٹریڈرز کی موجودگی فاریکس کی شناخت میں ہاتھ ہے۔ تاہم، ہر کوئی نہیں جانتا کہ ان ذرائع کا ٹریڈنگ

ڈپوزٹ کریں اپنے لوکل طریقوں سے۔

دوبارہ کال کریں

ایک مینجر جلد ہی آپکو کال کرے گا

نمبر تبدیل کریں

آپ کی درخواست موصول ہو گئ ہے

ایک مینجر جلد ہی آپکو کال کرے گا

اندروانی مسئلہ ،تھوڑی دیر بعد کوشش کریں

اہم چیزیں شروع کرنے کیکے
اپنا ای میل لکھیں اور مفت فوریکس گائیڈ بک وصول کریں

کتاب حاصل کرنے کیلئے اپنا ای میل داخل کریں

شکریہ آپکا ای میل موصول ہو چکا ہے

۔لنک پر کلک کریں اور اپنی فوریکس گائیڈ بک وصول کریں۔

آپ اپنے براؤزر کے پرانا ورژن کا استعمال کر رہے ہیں.

اپ ڈیٹ کریں اور محفوظ، مزید آرام دہ، پرسکون اور پیداواری ٹریڈنگ کے تجربے کے لئے ایک کوشش کریں.

Safari Chrome Firefox Opera